ذہنی دباؤ ہے جان لیوا

  • اپ ڈیٹ:
  • زمرہ صحت
ذہنی دبائو فائل فوٹو ذہنی دبائو

اگر آپ زہنی دباؤ کا شکار ہیں تو آپ مندرجہ ذیل بیماریوں کا شکار ہو سکتے ہیں۔

دل کی بیماری:
ماہرین کے مطابق ذہنی دباؤ لینے سے دل کی بیماری اور بلڈ پریشر کا رسک ذیادہ ہوتا ہے۔ ذہنی  دباؤ سے خون کا  دباؤ اور دل کی شرح میں تیزی آجاتی ہے جس کےنیتجہ میں خون کی نالیوں کا بند ہوجانا اور کولیسٹرول کا خطرہ ہوتا ہے۔ جزباتی دباؤ لینے سے انسان دل کی بیماری میں مبتلا ہو جاتا ہے ۔ وہ لوگ جو دل کی بیماری کا شکار ہیں انھیں ذہنی دباؤ سے اجتناب کرنا چاہئے۔

دمہ:
تحقیق کے مطابق ذہنی دباؤ سے دمے کا خطرہ بھی لاحق ہوتا ہے۔ کچھ ریسرچز کے مطابق والدین میں دائمی کشیدگی بھی بچوں کودمے کے مرض مبتلا کر دیتی ہے۔

موٹاپا:
جسم کے مختلف حصوں پہ موٹاپے کا ظاہر ہونا خطرے کی بات ہے مگر اتنی نہیں جتنی پیٹ پر موٹاپے کا ہونا، صحت کیلئے زیادہ خطرے کا باعث ہے، اور یہ مسلہ ان لوگوں کو پیش آتا ہے جو زہنی دباؤ کا شکار ہوتے ہیں۔

ذیابیطس:
ذہنی دباؤ دو طریقوں سے انسانی جسم میں ذیابیطس کے مرض کو پیدا کر دیتا ہے۔

  • برا برتاؤ اور کھانے پینے کے غلط اوقات۔
  • ذہنی دباؤ گلوکوز کے لیول کو بڑھا دیتا ہے جو زیبیطس جیسے خطرناک مرض میں مبتلا کر دیتا ہے۔

سر کا درد :
سر درد کی سب سے بڑی وجہ ذہنی دباؤ ہے۔ یہ نہ صرف سر کے درد بلکہ آدھے سردرد جس کو مائیگرین بھی کہتے ہیں میں مبتلا کرتا ہے۔

ڈپریشین اور پریشانی:
اس میں کوئی حیرانگی کی بات نہیں ہے کہ دائمی کشیدگی نہ صرف ڈپریشن اور پریشانی میں مبتلا کرتی ہے، بلکہ زیادہ سوچنا یاذہنی دباؤ انسان کو اندر سے کھوکھلا کر دیتا ہے اور ڈپریشن جیسے تشیوش ناک مرض میں مبتلا کر دیتا ہے۔

پیٹ کا خراب ہونا:
جہاں ذہنی دباؤ اتنی بیماریوں میں مبتلا کرتا ہے وہاں ہی ایک ایسی بیماری بھی ہے جوذہنی دباؤ پیدا نہیں کرتا اور وہ السر ہے مگر یہ اس سے بھی زیادہ بدترین مرض میں مبتلا کر دیتا ہے۔ جس میں پیٹ خراب ہونا، سینے میں جلن، گیس وغیرہ شامل ہے۔

سوچنے کی صلاحیت سے محروم ہو جانا:ـ
آپ یہ تو جانتے ہوں گے کہ ذہنی دباؤ لینے سے انسان چڑ چڑھا ہو جاتا ہے اور ایک بڑھے اور خطرناک مرض میں مبتلا ہو جاتا ۔ ذہنی دباؤ لینے سے انسانی دماغ ایک ایسی بیماری میں مبتلا ہوجاتا جس میں یاداشت کی کمزوری اور انسان آہستہ آہستہ بھولکڑ ہو جاتا ہے اور سوچنے سمجھنے کی صلاحیت سے محروم یو جاتا ہے۔

تیز رفتاری عمر:
ذہنی دباؤ لینے سے انسان اپنی عمر سے بڑا لگنا لگتا ہے۔ ایک ریسرچ کے مطابق ایسی خواتین جو زہنی دباؤکا شکار ہیں جلد بوڑھی ہو جاتی ہیں، ایسی خواتین کی نسبت جو زہنی دباؤ کا شکار نہیں ہیں۔

کم عمری میں موت:
ذہنی دباؤ سے انسان قبل از وقت دوسری دنیا سدھار جاتا ہے۔ جو لوگ زیادہ ٹیشن لیتے ہیں ان کی موت کم عمری میں ہی واقع ہو جاتی ہے۔ کہتے ہیں خالی دماغ شیطان کا گھر ہوتا ہے۔ انسان کو ہر وقت مصروف رکھنا چاہئے۔ غیر ضروری باتیں سوچنے سے اجتناب کرنا چاہئے۔

 

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store