عرب ممالک کے اسرائیل کو تسلم کرنے سے کیا ہوگا؟

گذشتہ چند ماہ سے بعض عرب ریاستوں کی جانب سے اسرائیل سے تعلقات کو معمول پر لانے اور روابط کا آغاز ہوچکا ہے۔ اس عنوان سے ان عرب ممالک کا یہ موقف ہے کہ ان کے اس اقدام سے فلسطینیوں کے مسائل میں کمی واقعہ ہوگی اور وہ اسرائیل سے بہتر طور پر فلسطینی عوام کے حقوق کے لیے بات کرسکیں گے۔

ڈھونڈ کر پیاسوں کو، پلانے لگا ہوں پانی

ڈھونڈ کر پیاسوں کو،

پلانے لگا ہوں پانی

سمجھی ہے جب سے میں نے ،

کربلا

.

ٹھکرایا گیا ہوں زمانے کا ،

پائی ہے میں نے بے دری

اے کاش چڑھ جائے ان ویرانوں میں،

کچھ رنگ مجھ پر حیدری

.

فنا ہوئیں سب مشکلیں ،

آفتوں کی ہر بلا ٹلی

نام لے کر اللہ کا ،

جو نادِعلی میں نے پڑھی

.

چلتا رگِ ظالم پر،

بنتا ہر مظلوم کی پکار

نام اچھا کتنا ،

گر ہوتا میرا ذو الفقار

.

دیکھو عظیم کتنی ،

حسین ابنِ علی کی شان ہے

جو جھکا نہ سر ، ہے نیزے پر

اور زُباں ،

بولتی قران ہے

.

زندہ رہے گا نام ،

آلِ رسول ﷺ کا پیام

جب تک فلک پر ہیں چاند ستارے،

اور زمیں پر ۔ ۔ ۔ صبح و شام

سلام ، قمر بنی ہاشم سلام

سلام، غریبِ نینوا سلام

***

شاعرِامن
کاشف شمیم صدیقی

انقلاب آفریں اور آہنی قیادت "شیر خدا حضرت علی کرم اللہ وجہ"

شیر خدا حضر ت علی کرم اللہ وجہ اسلام لانے والے اولین لوگوں میں سے ہیں، آپ کی عمر مبارک نو سال کی تھی جب محسن انسانیت ﷺ کے دست مبارک پر مشرف بہ ایمان ہوئے۔ مکی زندگی کے نشیب و فراز میں آپ دم بہ دم نبی اکرم ﷺ کے ہمراہ رہے۔ مدینہ میں داماد نبی ﷺ کا شرف حاصل ہوا،متعدد معرکوں میں داد شجاعت کے باعث ”شیر خدا“ کا لقب پایا۔ خیبر کی فتح اللہ تعالی نے آپ کے ہاتھ پر عطا کی۔ خلفائے راشدین کے دست راست رہے اور امت کے چوتھے خلیفہ کے طور پر قیامت تک مسلمان آپ کو یاد کرتے رہیں گے۔

Subscribe to this RSS feed