خالد خورشید وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان منتخب ہو گئے

خالد خورشید فائل فوٹو خالد خورشید

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے امیدوار خالد خورشید بھاری اکثریت کے ساتھ گلگت بلتستان کے پانچویں وزیر اعلیٰ منتخب ہو گئے۔

قانون ساز اسمبلی کے اجلاس میں 33 میں سے 31 ارکان نے رائے شماری میں حصہ لیا اور وزیر اعلیٰ کا انتخاب عمل میں لایا گیا۔

انتخاب میں ضلع استور سے تعلق رکھنے والے تحریک انصاف کے 40 سالہ خالد خورشید کو گلگت بلتستان کا پانچواں وزیر اعلیٰ منتخب کر لیا، جنہوں نے رائے شماری میں تحریک انصاف کے 23 میں سے 22 ارکان کی حمایت حاصل کی۔

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رکن اسمبلی اور متحدہ اپوزیشن کے متفقہ امیدوار امجد حسین ایڈووکیٹ کو اپوزیشن کے تمام 9 اراکین کی حمایت ملی۔

 

منتخب وزیر اعلیٰ 2 دسمبر کو گورنر گلگت بلتستان سے عہدے کا حلف لیں گے، وزیر اعظم عمران خان بھی حلف برداری کی تقریب میں شریک ہوں گے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: وزیر اعظم نے خالد خورشید کو وزیراعلیٰ گلگت بلتستان بنانے کی منظوری دے دی

واضح رہے کہ گلگت بلتستان کو انتظامی صوبے کی حیثیت 2009 میں ملی جس سے پہلی مرتبہ وزیر اعلیٰ اور گورنر کے عہدے ملے اور پیپلز پارٹی کے سید مہدی شاہ کو پہلے وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان منتخب ہونے کا اعزاز حاصل ہوا۔

اس کے بعد 2015 میں نگران وزیر اعلیٰ کی تقرری عمل میں لائی گئی اور اسی سال انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کو اکثریت حاصل ہوئی اور حافظ حفیظ الرحمٰن وزیر اعلیٰ بنے۔

جون 2020 میں حکومتی مدت پوری ہونے کے بعد نگراں وزیر اعلیٰ کی تقرری عمل میں لائی گئی، اب 15 نومبر 2020 کے انتخابات کے بعد خالد خورشید ایڈووکیٹ کو پانچویں وزیر اعلیٰ بننے کا اعزاز حاصل ہوا ہے۔

مزید جانیے: تحریک انصاف کے سید امجد زیدی اسپیکر جبکہ نذیر ایڈووکیٹ ڈپٹی اسپیکر گلگت بلتستان اسمبلی منتخب

یاد رہے کہ تین روز قبل وزیر اعظم عمران خان نے گلگت بلتستان کے نئے وزیراعلیٰ کے لیے خالد خورشید کے نام کو حتمی شکل دے دی تھی۔

پی ٹی آئی کے چیف آرگنائزر سیف اللہ خان نیازی نے وزیراعظم سے ملاقات کے بعد بتایا تھا کہ 'وزیراعظم عمران خان نے وزیراعلیٰ گلگت بلتستان کے لیے خالد خورشید کا نام فائنل کیا ہے'۔

خیال رہے کہ پی ٹی آئی کے ڈویژنل صدر خالد خورشید گلگت بلتستان اسمبلی کے حلقہ 13 استور ون سے رکن اسمبلی منتخب ہوئے ہیں۔

خالد خورشید نے 2018 میں پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی تھی جبکہ 2015 کے انتخابات میں آزاد حیثیت میں حصہ لیا تھا اور سابق صوبائی وزیر فرمان علی سے شکست کھا گئے تھے، تاہم حالیہ انتخابات میں دونوں کا مقابلہ ہوا اور اس مرتبہ انہیں کامیابی حاصل کی۔

 

 

 

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store