دہلی کی کورٹ نے کشمیری حریت پسند رہنما یاسین ملک کو مجرم قرار دے دیا

 کشمیری حریت پسند رہنما یاسین ملک فائل فوٹو کشمیری حریت پسند رہنما یاسین ملک

دہلی کورٹ نے کشمیری حریت پسند رہنما یاسین ملک کو دہشتگردی کی مالی معاونت کے کیس میں مجرم قرار دے دیا گیا، یاسین ملک گزشتہ منگل دہشت گردوں کی مالی معاونت سمیت دیگر الزامات میں ملوث پائے گئے تھے۔

بھارتی نیوز چینل ’این ڈی ٹی وی ‘ کے مطابق یاسین ملک پر غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام کے ایکٹ کے تحت الزامات عائد کیے گئے تھے۔

عدالت نے بھارتی تحقیقاتی ادارے (این آئی اے) کو کہا ہے کہ ان کے مالی حالات کا جائزہ لیں تاکہ ان پر جرمانے کے طور پر عائد کی جانے والی رقم کا تعین کیا جاسکے۔

عدالت کی جانب سے یاسین ملک کو ہدایت دی گئی کہ ایک حلف نامہ جمع کروائیں جس میں آمدن کے تمام ذرائع اور تمام اثاثے درج کریں۔

عدالت سزا کے تعین کے لیے 25 مئی کو دلائل سنے گی۔

یاسین ملک نے عدالت کو بتایا کہ وہ اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کا مقابلہ نہیں کر رہے ہیں، ان الزامات میں تعزیراتِ ہند کی دفعات 16 (اقدام دہشت گردی)، 17 ( دہشت گردوں کی مالی معاونت)، 18 (دہشت گردانہ عمل کی سازش)، 20 ( دہشت گرد تنظیم اور گینگ کی رکینیت) کی دفاع شامل کی گئی تھی۔

قبل ازیں عدالت نے کہا تھا کہ یاسین ملک نے پوری دنیا میں ایک وسیع اسٹریکچر اور میکنزم تشکیل دیا ہے تاکہ جموں و کشمیر میں ’آزادی کی جدوجہد‘ کے نام سے غیر قانونی سرگرمیوں کے لیے دہشتگردوں کی مالی معاونت کی جاسکے۔

عدالت کی جانب سےدیگر کشمیری حریت پسند رہنماؤں پر بھی فردِ جرم عائد کردی، جن میں فاروق احمد ڈار عرف بٹا کراتے، شبیر شاہ، مصارت عالم، محمد یوسف شاہ، آفتاب احمد شاہ، الطاف احمد شاہ، نعیم خان، محمد اکبر خاندے، راجا مہراج الدین کلوال، بشیر احمد بھٹ، ظہور احمد شاہ وتالی، شبیر احمد شاہ، عبدالراشد شیخ، اور نوال کیشور کپور شامل ہیں۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store