سپریم کورٹ کا افغان مہاجرین کو بجلی کے میٹر فراہم کرنے کا حکم

سپریم کورٹ کا افغان مہاجرین کو بجلی کے میٹر فراہم کرنے کا حکم سپریم کورٹ کا افغان مہاجرین کو بجلی کے میٹر فراہم کرنے کا حکم

سپریم کورٹ نے پشاور الیکٹرک سپلائی کمپنی(پیسکو) کو حکم دیا ہے کہ افغان مہاجرین کو بجلی کے میٹر فراہم کیے جائیں۔عدالت نے ہدایت دی کہ افغان مہاجرین پیسکو کو بجلی کے میٹرز کیلئے درخواستیں دیں۔ درخواستیں موصول ہونے پر پیسکو فوری طور پر بجلی کے میٹر لگائے۔

جسٹس قاضی امین نے ریمارکس دیئے کہ پاکستان میں رہنے والا ہر غیر ملکی قوانین کے تابع ہے۔ قانون کے مطابق غیرملکی تمام سہولیات کے حقدار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ افغان پناہ گزینوں کو بجلی دیں انکے بچے یہاں تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ ، وکیل درخواست گزار نے مؤقف اپنایا کہ افغان مہاجرین کو 1971 کے ریٹ پر بجلی فراہم کی جا رہی تھی۔

سپریم کورٹ نے2017 میں بھی مہاجرین کے کیمپ میں موجود ہر گھر کو الگ بجلی کا میٹر فراہم کرنے کا حکم دیا تھا۔

عدالت نے حکم دیا تھا کہ مہاجرین کواسی طرح گھریلو نرخوں پر بجلی کی فراہمی یقینی بنائی جائے جس طرح دیگر شہریوں کو فراہم کی جاتی ہے۔

عدالت نے اپنے تحریری حکم میں کہا تھا کہ پاکستان نے اقوام متحدہ کے کنونشزپر دستخط کررکھے ہیں اور ان کنونشنز میں مہاجرین کو خصوصی حیثیت دی گئی ہے اس لئے افغان مہاجر بھی پاکستان کے رہائشی صارفین کے برابر اسٹیٹس رکھتے ہیں۔

خیال رہے کہ خیبرپختونخوا میں 50 کے لگ بھگ افغان مہاجرین کے کیمپ ہیں۔ اقوام متحدہ کا ادارہ برائے مہاجرین کے پاس اس وقت چودہ لاکھ افغان مہاجرین رجسٹرڈ ہیں۔ پاکستان مہاجرین کو تعلیم اور صحت کی سہولیات فراہم کرنے والے ممالک میں شامل ہے۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store