یورپ میں لاک ڈاون میں نرمی کے بعد نئے کیسز میں اضافہ، صورتحال خراب سے خراب تر ہونے لگی

لاک ڈاؤن مین نرمی فائل فوٹو لاک ڈاؤن مین نرمی

یورپ میں جان لیوا کورونا وائرس کی نئی لہز سر اٹھانے لگی، ٹیڈ روس نے کہا کہ کورونا وائرس کی ویکسین بن بھی گئی تو اگلے سال سے پہلے دستیاب نہیں ہوگی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق مہلک ترین کورونا وائرس کی وبا نے دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے، یورپی ممالک میں سخت لاک ڈاون کے بعد نرمی کی گئی تو کورونا وائرس کیسز میں دوبارہ اضافہ ہونے لگا۔

عالمی ادارہ صحت نے یورپ میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز پر خبردار کیا ہے، عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ یورپ میں لاک ڈاون میں نرمی کے بعد نئے کیسز میں اضافہ ہورہا ہے۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں وائرس کی صورتحال خراب سے خراب تر ہوتی جارہی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈ روس نے یورپ میں کورونا وائرس کی دوسری لہر سراٹھانے پر کہا ہے کہ کورونا وائرس کی ویکسین بن بھی گئی تو اگلے سال سے پہلے دستیاب نہیں ہوگی۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 98 لاکھ 8 ہزار 276 ہوگئی ہے جبکہ ان میں سے 4 لاکھ 93 ہزار 996 کرونا مریض دم توڑ چکے ہیں۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store