بیلجیئم میں کورونا پابندیوں کے خلاف احتجاج، پولیس اور مظاہرین میں جھڑپ

کورونا پابندیوں کے خلاف بیلجیئم میں احتجاج، پولیس اور مظاہرین میں جھڑپ فائل فوٹو کورونا پابندیوں کے خلاف بیلجیئم میں احتجاج، پولیس اور مظاہرین میں جھڑپ

بیلجیئم کے دارالحکومت برسلز میں کورونا پابندیوں کےخلاف ہزاروں افراد سڑکوں پر نکل آئے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق برسلز میں تقریباً 8 ہزار شہریوں نے کورونا پابندیوں کے خلاف مارچ کیا۔ مظاہرے کے شرکا نے نعرے بازی اور آتش بازی کی۔

پولیس نے خاردار تاریں لگا کر مظاہرین کو یورپی یونین کے ہیڈ کوارٹرز جانے سے روکے رکھا ۔ یورپی یونین کے ہیڈ کوارٹرز جانے سے روکنے پر احتجاج پر تشدد صورت اختیار کر گیا۔

پولیس کی جانب سے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے واٹر کینن اور آنسو گیس کا استعمال کیا گیا۔ مظاہرین نے پولیس اہلکاروں پر پتھراو کیا۔

پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپ میں پولیس اہلکاروں سمیت متعدد افراد زخمی ہوئے اور 20 سے زئد مظاہرین کو حراست میں لے لیا گیا۔

پولیس کی جانب سے مارچ کی نگرانی کے لیے دو ڈرونز اور ایک ہیلی کاپٹر کا بھی استعمال کیا گیا۔

مظاہرین نے بیلجیئم میں عائد ماسک ،ویکسین پاسز اور لاک ڈاون جیسی پابندیوں کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ چند ہفتوں میں یورپی ممالک میں کورونا کی نئی پابندیوں کے خلاف متعدد احتجاجی مظاہرے دیکھنے میں آئے ہیں۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store