سندھ ہائی کورٹ: انسداد دہشت گردی عدالت سے سزائے موت پانے والے ملزمان کی سزائیں کالعدم

 سندھ ہائی کورٹ فائل فوٹو سندھ ہائی کورٹ

سندھ کی اعلیٰ عدالت نے پیر کے روز انسداد دہشت گردی کی عدالت کی جانب سے سزائے موت پانے والے پانچ ملزمان کی سزائیں کالعدم قرار دے دی ہیں۔

سندھ ہائی کورٹ میں قتل کے ایک اور مقدمے کے دو ملزمان کو سزاؤں سے بری کردیا گیا، عدالت کا کہنا تھا کہ ملزمان کے خلاف ٹھوس شہادتیں پیش نہیں کی گئیں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ کامران نامی نوجوان کو نومبر2014میں کورنگی کے علاقے میں بے دردی سے قتل کیا گیا تھا جس کے بعد پولیس نے دو ملزمان ندیم عرف منگا اور ذیشان کو گرفتار کیا تھا۔

خصوصی عدالت نے ملزمان کو عمرقید اور2،دو لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی، ملزمان نے ماتحت عدالت کی سزاؤں کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی۔

اپیلٹ بینچ نے ملزمان کی اپیل منظورکی اور ماتحت عدالت کی جانب سے دی گئیں سزائیں کالعدم قرار دے دیں تاہم عدالت کی جانب سے مذکورہ ملزمان کی رہائی کا حکم دیا گیا ہے یا نہیں اس حوالے سے کوئی اطلاع تاحال موصول نہیں ہوئی ہے۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store