شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو پیرول پر رہا کرنے کا فیصلہ

فایل فوٹو فایل فوٹو

 پنجاب حکومت نے قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز کو پیرول پر رہا کرنے کا فیصلہ کر لیا۔

پنجاب حکومت کی کابینہ سب کمیٹی برائے داخلہ آج وزیر اعلیٰ پنجاب کو سفارشات بھجوائے گی اس سے قبل پیرول سے متعلق سب کمیٹی داخلہ کو وزارت داخلہ نے اپنی سفارشات بھجوا دی تھیں۔

محکمہ داخلہ نے محکمہ جیل خانہ جات کا بیان اور درخواستیں بھی بھجوا دیں اور سب کمیٹی داخلہ کی سفارشات کے بعد آج وزیر اعلیٰ پنجاب منظوری دیں گے۔

سب کمیٹی داخلہ کی سفارشات کی روشنی پر پیرول کی مدت کا تعین کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق شہباز شریف کی والدہ کی میت جمعرات کو لندن سے پاکستان پہنچنے کا امکان ہے۔

بیگم شمیم اختر کی میت کو پاکستان روانگی سے قبل نماز جنازہ ریجنٹ پارک مسجد میں ادا کی جائے گی۔

بیگم شمیم اختر کی میت کاغذی کارروائی کے بعد پاکستان روانہ کی جائے گی۔ نوازشریف کی ہمشیرہ بھی والدہ کی میت کے ساتھ پاکستان آئیں گی۔

لندن میں نواز شریف کی والدہ کی میت کو ریجنٹ پارک مسجد کے سرد خانہ منتقل کر دیا گیا ہے۔ کاغذی کارروائی مکمل ہونے کے بعد میت پاکستان روانہ کی جائے گی۔ بیگم شمیم اختر کی میت پاکستان بھجوانے میں دو سے تین دن لگ سکتے ہیں۔

بیگم شمیم اختر دو روز قبل لندن میں انتقال کر گئی تھیں وہ طویل عرصے سے علیل تھیں۔ پاکستان میں بیگم شمیم اختر کی نماز جنازہ شریف میڈیکل سٹی میں ادا کی جائے گی۔ مرحومہ کو لاہور میں سپرد خاک کیا جائے گا۔

خاندانی ذرائع کے مطابق بیگم شمیم اختر کو الزائمر کی بیماری لاحق تھی اور ان کے سینے میں شدید انفیکشن ہوگیا تھا۔

لیگی رہنما عطا اللہ تارڑ نے کا کہنا تھا کہ نواز شریف ڈاکٹرز کی ہدایت ملنے تک وطن واپس نہیں آسکیں گے۔ شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی پیرول کی درخواست ڈپٹی کمشنر کو جمع کرا دی گئی ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ شہباز شریف کو والدہ اور حمزہ شہباز کو دادی کی آخری رسومات میں شرکت کے لیے دو ہفتے کے لیے رہا کیا جائے۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store