بھارت کا بیانیہ آج اپوزیشن کا بیانیہ بن چکا ہے: وزیر خارجہ

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی  قومی اسمبلی میں فائل فوٹو وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی قومی اسمبلی میں

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ن لیگ والے آج ہمیں طعنے دے رہے ہیں۔

وزیر خارجہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ پاکستان کے اداروں کو متنازع کون بنا رہا ہے؟ بھارت کی بولی بولنے والوں کو شرم آنی چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ آپ کا خیال ہے 3 جلسیوں سے ہم مرعوب ہوجائیں گے، جلسے کرنے ہمیں بھی آتے ہیں اور زبان درازی ہم بھی کرسکتے ہیں، اتنی قوت ہے کہ ترکی باترکی آپ کی ہربات کا جواب دے سکتے ہیں، آپ آئیں اپنی بات کریں اورحکومت کا مؤقف نہ سنیں یہ جمہوریت نہیں۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ قوم کے سامنے حکومت کا اور اپوزیشن کا دونوں نکتہ نظر آنا چاہیے، ایک سال دم دبا کر بیٹھے رہے، مک مکا کرتے رہے، مک مکا نہ ہوسکا تو آج جمہوریت جاگ اٹھی ہے، کس منہ سے جمہوریت کی بات کررہے ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آئینی اداروں پر حملے کیے جارہے ہیں، پی ڈی ایم کے لوگ پاکستان مخالف بیانیہ اپنا کر کس کے ایجنڈے پر کام کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اسلام پرحملہ کیا گیا، مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے ہیں، اپوزیشن ارکان سے کہا مشترکہ قرارداد پیش کرتے ہیں۔

پیپلزپارٹی ارکان نے کہا ن لیگ والے اپنی قرارداد پیش کرنا چاہتے ہیں، خواجہ آصف نے قرارداد سے ہٹ کر ہر سیاسی گفتگو کی، ن لیگ والے ہرچیزکو سیاست کی نذر نہ کریں۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store