تباہ کن سیلاب کے بعد پاکستان میں غربت کی شرح میں اضافے کا خدشہ

تباہ کن سیلاب کے بعد پاکستان میں غربت کی شرح میں اضافے کا خدشہ فائل فوٹو تباہ کن سیلاب کے بعد پاکستان میں غربت کی شرح میں اضافے کا خدشہ

عالمی بینک نے حالیہ تباہ کن سیلاب کے نتیجے میں پاکستان میں غربت کی شرح میں 3.7 تا 4.0 فیصد اضافے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ مزید 84 لاکھ سے 91 لاکھ افراد غربت کے شکنجے میں جکڑے جائیں گے۔

پاکستان کو جسے گلوبل وارمنگ کی وجہ سے 14.9ارب ڈالر زسے زائد نقصان اٹھانا پڑا ہے جبکہ ماحول سے متعلق مستقبل کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے موثر اور جامع منصوبہ بندی کی ضرورت ہے۔

رواں سال کے سیلاب سے متعلق ”پوسٹ ڈیزاسٹر نیڈز اسیسمنٹ“ رپورٹ کے مطابق سیلاب سے ہونے والے براہ راست نقصانات کا تخمینہ 14.9ارب ڈالر زلگایا گیا جبکہ مجموعی معاشی خسارہ 15.2ارب ڈالر کا ہوا جو ملکی معیشت کو ناک آؤٹ کردینے والا نقصان ہے۔

ورلڈبینک کی جانب سے جاری کردہ ”کنٹری کلائمیٹ اینڈ ڈویلپمنٹ رپورٹ“ میں، جو اسی ماہ جاری کی گئی ہے، پاکستان کے بارے میں کہا گیا ہے کہ سیلاب کے بعد بحالی اور مرمت وتعمیرنو کے کاموں پر کم سے کم 16.3ارب ڈالر کزے اخراجات کا اندازہ لگایا گیا ہے موسمی تبدیلیوں نے پاکستان کے لیے خطرے کی گھنٹی بجادی ہے کیونکہ ایک طرف تو پاکستان کے پاس گلیشیئرز کی صورت میں دنیا بھر میں برف کے تیسرے سب سے بڑے ذخائر ہیں اور دوسری جانب ملک میں گرمی کی شدت میں مسلسل اضافے کے باعث پارہ مسلسل اوپر کی طرف جارہا ہے۔

 

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store