پارٹی اور پارٹی سربراہ دیکھ کر عدالتوں کے فیصلے بدل جاتے ہیں: مریم نواز

مریم نواز فائل فوٹو مریم نواز

نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نواز نے کہا ہے کہ پارٹی اور پارٹی ہیڈ کو دیکھ کر آئین کی تشریح بدل جاتی ہے، عدلیہ کی توہین متنازع فیصلے کرتے ہیں، عوام نہیں۔ فیصلہ ٹھیک کیا جائے تو تنقید کوئی معنی نہیں رکھتی۔

اسلام آباد میں حکمران اتحاد کے رہنماوں کی پریس کانفرنس کے دوران مریم نواز کا کہنا تھا کہ عدالتی فیصلوں کے اثرات دہائیوں تک رہتے ہیں، ایک غلط فیصلہ سارے مقدمے کو اڑا کر رکھ دیتا ہے، جب بینچ بنتا ہے تو لوگوں کو پتہ ہوتا ہے فیصلہ کیا ہو گا۔ ادارے کی توہین ادارے کے اندر سے ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حمزہ شہباز کی جیت کے بعد تحریک انصاف والے سپریم کورٹ گئے، قوم نے دیکھا چھٹی کے دن، رات کو سپریم کورٹ رجسٹری کھلی، رجسٹرار خود گھر سے آیا اور کہا کہاں ہے پٹیشن، پی ٹی آئی نے رجسٹرار سے کہا ابھی پٹیشن تیار نہیں ہوئی۔ قاسم سوری کے وقت کیوں نہیں کہا گیا کہ آئین کی خلاف ورزی ہوئی۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ عمران نیازی کو کھلی چھٹی پہلے بھی تھی آج بھی ہے، جب سے حمزہ شہباز وزیراعلیٰ بنے، انہیں کام نہیں کرنے دیا گیا، پارٹی اور پارٹی ہیڈ کو دیکھ کر آئین کی تشریح بدل جاتی ہے، توہین عدالت کیس میں ہمارے لوگوں کو چن چن کر باہر کیا گیا۔ مجھے اپنے والد سے ملے اڑھائی برس ہو چکے، عمران خان کہتا ہے جان کو خطرہ ہے، پیش نہیں ہو سکتا۔ دہرے معیار کو ختم ہونا چاہئے، جب تک ایسا نہیں ہو گا، ملک ترقی نہیں کرے گا۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store