والدیں کے لیے بڑی خوشخبری، ٹیکنالوجی نے کر دیا کام آسان

ایم آئی ٹی کے ماہرین نے آرایف آئی ڈی والے سینسر سے لیس انتہائی کم خرچ پیمپر تیار کرنے کا اعلان کیا ہے۔ فوٹو: ایم آئی ٹی فائل فوٹو ایم آئی ٹی کے ماہرین نے آرایف آئی ڈی والے سینسر سے لیس انتہائی کم خرچ پیمپر تیار کرنے کا اعلان کیا ہے۔ فوٹو: ایم آئی ٹی

میساچیوسیٹس انسٹی ٹیوٹ آٖف ٹیکنالوجی (ایم آئی ٹی) کے انجینیئروں نے ایک چھوٹا آرایف آئی ڈی سینسر بنایا ہے جو پیمپر گیلا ہونے پر والدہ یا دیگرافراد کو ایک پیغام بھیجتا ہے۔ اسے بنانا بہت آسان ہے جس میں ایک پیمپر کی قیمت دو سینٹ یا پاکستانی تین روپے کے برابر ہے۔

گیلے ڈائپر کی خبر دینے والا سنسر ایجاد نومولود بچوں کی بے چینی پر مائیں بار بار پیمپر کھول کر دیکھتی ہیں اور اس میں وقت ضائع ہوتا ہے۔ اس مسئلے کے حل کی جانب ایک کم خرچ ٹیکنالوجی سے خاطرخواہ پیش رفت ہوئی ہے۔

آرایف آئی ڈی سینسرکو کسی بھی ہائیڈروجل والے ڈائپر میں لگایا جاسکتا ہے کیونکہ ہائیڈروجل ڈائپر میں عام پائے جاتے ہیں۔ اسے لگانے سے پیمپر کی ساخت اور وزن پر کوئی فرق بھی نہیں پڑتا۔ جیسے ہی بول و براز کی صورت میں ڈائپر گیلا ہوتا ہے آر ایف آئی ڈی سینسر ایک میٹر کے دائرے میں اس کی خبر دیتا ہے جسے فون یا ٹیبلٹ پر دیکھا جاسکتا ہے۔ سینسر کے لیے علیحدہ بیٹری لگانے کی کوئی ضرورت نہیں ہوتی اور یہ گھر کے وائی فائی سے جڑے نیٹ ورک پر بھی اس کی اطلاع دے سکتا ہے۔ اگر والدین چاہیں تو کی چین میں ایک مخصوص ریڈر بھی لگا سکتے ہیں۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store