فوک گلوکارمنصور علی ملنگی کو مداحوں سے بچھڑے 6 برس بیت گئے

فوک گلوکار منصور ملنگی کو مداحوں سے بچھڑے 6 برس بیت گئے File Photo فوک گلوکار منصور ملنگی کو مداحوں سے بچھڑے 6 برس بیت گئے

معروف گلوکار منصور علی ملنگی کو مداحوں سے بچھڑے چار برس بیت گئے لیکن ان کے گیت آج بھی کانوں میں رس گھولتے ہیں۔ سرائیکی زبان کے معروف گلوکار منصور علی ملنگی جھنگ کی تحصیل احمد پور سیال میں سرنگی نواز پٹھان علی خان کے گھر یکم جنوری 1947 کو پیدا ہوئے اور ابتدائی تعلیم جی اے چشتی سے حاصل کی۔

انہیں بچپن ہی سے گلوکاری کا شوق تھا اور اس شوق کی تکمیل کے لیے انہوں نے 18 سال کی عمر میں ریڈیو پاکستان پر پہلا گیت ’اک پھل موتیے دا مار کے جگا سونڑیاں‘ گایا جس نے انہیں شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیا۔

منصور ملنگی نے سینکڑوں گیت گائے جو بے حد مقبول ہوئے، انہوں نے دو سو سے زائد آڈیو البم ریلیز کیے۔ ان کی خدمات کے پیشِ نظر انہیں صدارتی ایوارڈ اور تمغہ امتیاز سے نوازا گیا۔

منصور علی ملنگی 11 دسمبر کو حرکت قلب بند ہونے سے انتقال کر گئے تھے، مرحوم کو آبائی قبرستان جکھڑ فقیر گڑھ موڑ میں سپرد خاک کیا گیا تھا۔

subscribe YT Channel install suchtv android app on google app store