Tue 26 September 2017

پاکستان نے ورلڈ الیون کو 20 رنز سے ہرادیا

پاکستان اور ورلڈ الیون کے درمیان آج میدان سجے گا پاکستان اور ورلڈ الیون کے درمیان آج میدان سجے گا

آزادی کپ کے پہلے ٹی ٹوئنٹی میں پاکستان نے ورلڈ الیون کو 20 رنز سے ہرادیا۔ ہدف کے تعاقب میں ورلڈ الیون نے 20 اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 177 رنز بناسکی۔

ورلڈ الیون کی جانب سے اوپنر تمیم اقبال اور ہاشم آملہ نے محتاط انداز میں اننگ کا آغاز کیا لیکن 43 کے مجموعی اسکور پر تمیم اقبال 18 رنز بناکر رومان رئیس کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔

چھٹے اوور میں ہی ہاشم آملہ بھی 26 رنز بناکر رومان رئیس کی گیند پر عماد وسیم کو کیچ دے بیٹھے۔

ورلڈ الیون کی تیسری وکٹ 13 ویں اوور میں کپتان فاف ڈوپلیسی کی گری جو 29 رنز بناکر شاداب کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

رومان رئیس نے جارح مزاج ٹم پین کا 25 رنز پر سہیل خان کی گیند پر آسان کیچ لیا جب کہ ڈیوڈ ملر 9 رنز بناکر آؤٹ ہوئے جو شاداب خان کی گھومتی ہوئی گیند پر وکٹ کیپر کپتان سرفراز احمد کے ہاتھوں اسٹمپ آؤٹ ہوئے۔

جارح مزاج گرانٹ ایلیٹ 14 رنز بناکر سہیل خان کی گیند پر عماد وسیم کو کیچ دے بیٹھے جب کہ تھیسارا پرپرا 17 رنز بناکر رن آؤٹ ہوئے۔

اس سے قبل قومی ٹیم کی جانب سے جارح مزاج بلے باز فخر زمان اور احمد شہزاد نے اننگز کا آغاز کیا تو پہلے ہی اوور میں فخر زمان 2 گیندوں پر 8 رنز بنانے کے بعد مورنی مورکل کی گیند پر ہاشم آملہ کو کیچ دے بیٹھے۔

پاکستان اوپنر احمد شہزاد 39 رنز پر بین کٹنگ کی گیند پر سیمی کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے، احمد شہزاد اور بابر اعظم نے تیسری وکٹ پر 122 رنز کی شراکت قائم کی۔

پاکستان کی تیسری وکٹ 16 ویں اوور میں اس وقت گری جب بابر اعظم 86 رنز بنا کر عمران طاہر کا شکار بنے۔

بابر اعظم نے شاندار اننگ میں 10 چوکے اور 2 چھکے لگائے تاہم وہ پاکستانی سرزمین پر سنچری بنانے والے پہلے بلے باز نہ بن سکے۔

18 ویں اوورز کی آخری گیند پر پاکستان کپتان سرفراز احمد 4 رنز بناکر پویلین لوٹ گئے۔

پاکستانی مڈل آرڈر بیسٹیمن شعیب ملک نے جارحانہ کھیل پیش کیا اور 20 گیندوں پر4 چوکوں اور 2 چھکوں کی مدد سے 38 رنز بناکر تھسارا پریرا کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔

عماد وسیم نے بھی جارحانہ کھیل پیش کرتے ہوئے 4 گیندوں پر 2 چھکوں کی مدد سے 15 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے۔

ورلڈ الیون کی جانب سے تھسارا پریرا نے دو جبکہ عمران طاہر، بین کٹنگ اور مارنی مارکل نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

تین میچز پر مشتمل ٹی ٹوئنٹی سیریز کے پہلے میچ میں مہمان ٹیم کے کپتان فاف ڈوپلیسی نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا۔

سرفراز احمد کی قیادت میں پاکستانی ٹیم فخر زمان، احمد شہزاد، بابراعظم، شعیب ملک، عماد وسیم، شاداب خان، فہیم اشرف، حسن علی، رومان رئیس اور سہیل خان پر مشتمل ہے۔

قومی ٹیم کے کپتان کا کہنا تھا کہ ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا، ہماری ٹیم میں 8 کھلاڑی ہوم گراؤنڈ پر پہلی بار انٹرنیشنل میچ کھیل رہے ہیں تاہم ورلڈ الیون کے خلاف بھرپور انداز سے بیٹنگ کرنے کی کوشش کریں گے۔

قومی ٹیم کے فاسٹ بولر محمد عامر بیٹی کی پیدائش کی وجہ سے ٹیم کا حصہ نہ بن سکے جب کہ عثمان شنواری کی جگہ سہیل خان کو ٹیم میں جگہ دی گئی ہے۔

ٹاس سے قبل مہمان ٹیم کو خصوصی رکشوں میں لایا گیا تو شائقین کرکٹ کے جوش میں مزید اضافہ ہوگیا۔

مہمان کھلاڑیوں کو رکشوں میں گراؤنڈ کے چکر لگوائے گئے اور شائقین نے کھڑے ہو کھلاڑیوں کا استقبال کیا۔

کپتان فاف ڈوپلیسی، ہاشم آملہ، عمران طاہر، مورنی مورکل اور ٹم پین ایک رکشے میں بیٹھے جب کہ ڈیرن سیمی، جارج بیلی دوسرے رکشے میں بیٹھ کر میدان میں داخل ہوئے۔

سیکیورٹی فورسز نے گراؤنڈ کے اندر اور باہر پوزیشنیں سنبھالی ہوئی ہیں۔

قذافی اسٹیڈیم میں داخلے سے قبل مختلف مقامات پر گزر گاہیں بنائی گئی جہاں اسکیننگ گیٹ لگائے گئے جس میں سے تماشائیوں کو گزار کر گراؤنڈ میں داخلے کی اجازت دی گئی۔

سات ممالک کا 14 رکنی ورلڈ الیون اسکواڈ کپتان فاف ڈوپلیسی، ہاشم آملہ، ڈیوڈ ملر، مورنی مورکل، عمران طاہر، ٹم پین، جارج بیلی، گرانٹ ایلیٹ، سیموئل بدری، بین کٹنگ، پال کولنگ وڈ، تمیم اقبال، ڈیرن سیمی اور تھسارا پریرا پر مشتمل ہے۔

قذافی اسٹیڈیم کے باہر اور مختلف مقامات پر جگہ جگہ خیر مقدمی بینرز اور بل بورڈز آویزاں کئے گئے ہیں جب کہ گراؤنڈ کے آہنی دروازے پر کھلاڑیوں کی تصویروں والے بل بورڈز بھی لگائے گئے ہیں۔

'انڈی پینڈنس کپ' کے دوران سٹی ٹریفک پولیس لاہور نے بھی خصوصی پلان ترتیب دیا ہے جس کے تحت والٹن اور ڈیفنس روڈ سے آنے والے افراد براستہ کیولری ، فردوس مارکیٹ، حسین چوک سے بائیں مڑ کر لبرٹی مارکیٹ پارکنگ میں گاڑیاں اور موٹر سائیکل پارک کریں۔

قذافی اسٹیڈیم کے اطراف گاڑیوں کی پارکنگ مغل پورہ، مال روڈ اور جیل روڈ پر ہوگی۔

شہریوں کی سہولت کے لیے پارکنگ ایریا سے مفت شٹل سروس کا انتظام بھی کیا گیا اور شائقین کرکٹ کو 38 بسوں کے ذریعے پارکنگ سے اسٹیڈیم کے انٹری پوائنٹس تک پہنچایا گیا۔

چنگ چی، آٹو رکشے، ایل پی جی، ایل این جی اور سی این جی گاڑیوں کا پارکنگ ایریا میں داخلہ ممنوع تھا۔

گاڑی میں موجود تمام افراد کے پاس شناختی کارڈ اور ماسوائے ڈرائیور تمام افراد کے پاس میچ کا ٹکٹ ہونا لازمی قرار دیا گیا ہے۔

میچ کے لئے ضابطہ اخلاق بھی جاری کردیا گیا ہے جس کے مطابق شائقین کرکٹ پانی کی بوتل اور کھانے پینے کی اشیا اسٹیڈیم میں نہیں لے جا سکیں گے۔

ذرائع کے مطابق سگریٹ لائٹرز اور لوہے کی کوئی بھی چیز اسٹیڈیم میں لے جانے کی اجازت نہیں ہوگی اور ہر انکلوژر میں مجسٹریٹ تعینات ہو گا۔

ضابطہ اخلاق کے مطابق شائقین کسی قسم کی نعرے بازی نہیں کرسکیں گے، ہلڑ بازی، غیرشائستہ نعروں پر فوری قانونی کارروائی کی جائے گی اور نامناسب نعرے بازی کرنے والے کو مجسٹریٹ فوری گرفتار کر کے موقع پر سزا دے گا ۔

میچ کی سیکیورٹی کے لئے پلان بھی جاری کردیا گیا ہے جس کے مطابق گراؤنڈ کے اندر اور باہر پاک فوج اور رینجرز کے اہلکار سیکیورٹی کے فرائض انجام دیں گے جب کہ پولیس کے 19 ایس پیز، 45 ڈی ایس پیز اور 6 ہزار اہلکار سیکیورٹی کی ذمہ داری ادا کریں گے۔

ورلڈ الیون میں شامل سیموئل بدری نے بھی لاہور پہنچ کر ٹیم کو جوائن کرلیا جس کے بعد مہمان ٹیم کا 14 رکنی اسکواڈ مکمل ہوگیا۔

مہمان کھلاڑیوں نے صبح اٹھ کر ہلکی ورزش کی جس کے بعد انہوں نے ہوٹل کے ریستوران میں بھرپور ناشتہ کیا۔

قومی کرکٹرز بھی میدان میں اترنے سے قبل پرجوش ہیں اور نوجوان کھلاڑی بابر اعظم اور عماد وسیم بھی بال کٹوانے کے لئے ہوٹل میں ہی قائم پارلر پہنچ گئے جہاں انہوں نے مداحوں کے ساتھ سیلفیاں بھی بنوائیں۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل ( آئی سی سی ) کے چیرمین ششانک منوہر نے پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کا خیر مقدم کیا۔

اپنے پیغام میں انہوں نے کہا کہ پاکستانی کھلاڑیوں اور شائقین کو اپنے ملک میں کرکٹ کھیلنے اور دیکھنے کا موقع ملے گا اور وہ پرامید ہیں کہ پاکستان میں آج کا دن عالمی کرکٹ کی بحالی کا دن ہوگا۔

آج ہونے والے ٹاکرے سے قبل مہمان ورلڈ الیون کی ٹیم نے گزشتہ روز قذافی اسٹیڈیم میں بھرپور پریکٹس کی۔ کھلاڑیوں نے بولنگ، بیٹنگ اور فیلڈنگ کی پریکٹس کی۔

Leave a comment

Make sure you enter all the required information, indicated by an asterisk (*). HTML code is not allowed.