Wed 18 October 2017

فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ 4 خطرناک دہشت گردوں کو پھانسی دے دی: آئی ایس پی آر

فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ 4 خطرناک دہشت گردوں کو پھانسی دے دی فائل فوٹو فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ 4 خطرناک دہشت گردوں کو پھانسی دے دی

خیبر پختونخوا کی جیل میں فوجی عدالتوں سے سزا یافتہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) سے تعلق رکھنے والے 4 خطرناک دہشت گردوں کو تختہ دار پر لٹکا دیا گیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق دہشت گرد معصوم شہریوں، مسلح افواج اور قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں پر حملے سمیت سیدو شریف ایئرپورٹ اور تعلیمی اداروں پر حملوں میں ملوث تھے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق جن دہشت گردوں کو پھانسی دی گئی، ان کی تفصیلات درج ذیل ہیں۔

بخت امیر ولد امیر زمان

مجرم کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کا ایک فعال رکن تھا، جس نے مسلح افواج پر حملے کیے، جس کے نتیجے میں متعدد افسران اور سپاہی شہید اور زخمی ہوئے، مجرم کے پاس سے دھماکا خیز مواد بھی برآمد ہوا، دہشت گرد نے مجسٹریٹ اور ٹرائل کورٹ کے سامنے اپنے جرائم کا اعتراف کیا اور اسے سزائے موت سنائی گئی۔

اصغر خان ولد احمد جان

مجرم کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کا ایک فعال رکن تھا، جس نے مسلح افواج اور قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں پر حملے سمیت تعلیمی اداروں کو بھی نشانہ بنایا، جس کے نتیجے میں متعدد سپاہی اور عام شہری شہید اور زخمی ہوئے، دہشت گرد نے مجسٹریٹ اور ٹرائل کورٹ کے سامنے اپنے جرائم کا اعتراف کیا اور اسے سزائے موت سنائی گئی۔

محمد نواز ولد گل محمد

مجرم کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کا ایک فعال رکن تھا، جس نے مسلح افواج پر حملے سمیت تعلیمی اداروں کو بھی نشانہ بنایا، جس کے نتیجے میں فوجی اہلکار شہید ہوئے، مجرم کے پاس سے آتشیں اسلحہ اور دھماکا خیز مواد بھی برآمد ہوا، دہشت گرد نے مجسٹریٹ اور ٹرائل کورٹ کے سامنے اپنے جرائم کا اعتراف کیا اور اسے سزائے موت سنائی گئی۔

مشتاق احمد ولد محمد معراج

مجرم کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کا ایک فعال رکن تھا، جو سیدو شریف ایئرپورٹ پر حملے، محکمہ موسمیات کے ملازمین کے قتل اور تعلیمی اداروں پر حملوں میں ملوث تھا، جس کے نتیجے میں عام شہری شہید اور زخمی ہوئے، مجرم کے پاس سے آتشیں اسلحہ اور دھماکا خیز مواد بھی برآمد ہوا، دہشت گرد نے مجسٹریٹ اور ٹرائل کورٹ کے سامنے اپنے جرائم کا اعتراف کیا اور اسے سزائے موت سنائی گئی۔

Leave a comment

Make sure you enter all the required information, indicated by an asterisk (*). HTML code is not allowed.